79

بورے والا:ٹریفک پولیس اور محکمہ پرونشیل ہائی وے کی مجرمانہ غفلت سے ٹریفک حادثات میں روزبروز اضافہ

بورے والا(سرفرازعلی رانا)ٹریفک پولیس اور محکمہ پرونشیل ہائی وے کی مجرمانہ غفلت سے ٹریفک حادثات میں روزبروز اضافہ،کئی قیمتی جانیں ضائع ہونے پر شہری سراپا احتجاج،اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ،تفصیلات کے مطابق ٹریفک حادثات میں روزبروز اضافہ کے باعث گذشتہ روز بھی ملتان روڈ پر دو حادثات رونما ہوئے جن میں دو جوان طالبعلم جو اپنے والدین کے خواب اور پاکستان کے مستقبل کا سرمایہ تھے بے لگام اور بے ہنگم نظام ٹریفک کی نظر ہوگئے جس کو دیکھ کر ہر شہری دل خون کے آنسو روتا ہے پہلے حادثے نواحی گاﺅں 515ای بی کی رہائشی دسویں جماعت کی طالبہ جو کہ پیپر دے کر اپنے بھائی کے ساتھ موٹر سائیکل پر سوار ہو کر اپنے گھر واپس جارہی تھی کہ جب وہ ملتان روڈ مرضی پورہ پہنچے تو تیز رفتار ڈالہ نے ان کو ٹکر مار دی جس سے معصوم طالبہ موقع پر ہی جاں بحق ہوگئی جبکہ اُسکا بھائی زخمی ہو گیا جاں بحق ہونے والی معصوم بچی کی نعش جب اُنکے گھر پہنچی تو پورے گاﺅں میں کہرام مچ گیا معصوم بچی کی نعش دیکھ کر والدین اور اُسکے بہن بھائیوں پر قیامت ٹوٹ گئی دوسرا حادثہ میں بھی دسویں جماعت کا طالبعلم زندگی کی بازی ہار گیا ان بچوں کی موت کا ذمہ دار کون ہے ان معصوم بچوں کے والدین کس کی جان کو روئیں وہ کس پر ماتم کریں ضلعی انتظامیہ کو کوسیں،ٹریفک پولیس پر آنسو بہائیں یا محکمہ پرونشیل ہائی وے کوقاتل قرار دیں ٹریفک کے بڑھتے ہوئے حادثات میں ٹریفک قوانین پر عملدرآمد کروانا ٹریفک پولیس کی ذمہ داری ہے ناکہ صرف سڑکوں پر ناکے لگا کر عوام سے پیسہ بٹورنا اُنکا کام ہے معصوم لوگوں کی اموات کے ذمہ داران ٹریفک پولیس،محکمہ پرونشیل ہائی وے اور ضلعی انتظامیہ ہیں مقامی شہریوں محمد شیر خاں کھچی،سرفراز علی رانا،منظور برکت ماڑی والا،چوہدری اعجاز اسلم،ملک فاروق احمد اعوان،حافظ محمد طارق،عمران خورشید ڈوگر،غلام مصطفےٰ بھٹی اور دیگر نے وزیر اعلیٰ پنجاب،آئی جی پنجاب اور ٹریفک پولیس کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ ٹریفک نظام میں بہتری لانے اور حادثات کو روکنے کے لیے کوئی جامع پلان بنایا جائے تاکہ آئے روز شہری ٹریفک حادثات کا نشانہ نہ بن سکیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں