A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Only variable references should be returned by reference

Filename: core/Common.php

Line Number: 257

A PHP Error was encountered

Severity: Warning

Message: Cannot modify header information - headers already sent by (output started at /home/pakist14/public_html/system/core/Exceptions.php:185)

Filename: libraries/Session.php

Line Number: 672

Pakistan News

اخبارات

اہم خبریں


آج سے ہزار سال بعد دنیا کیسی ہوگی ؟

آج سے ہزار سال بعد ہم او

اسلامی معاشرے کے خدوخال

دین اسلام تعمیر سیر ت و ک

16 دسمبر

16 دسمبر میں مون ہوں‘ نہی

سوات کی بیٹی

چلو کہ دشتِ جہالت کو خیر

عمران خان کے لیے

خان صاحب آپ نے 25 اپریل 1996

یا اللہ ہمیں بچالے

ارادوں اور بعض اوقات پخت

تحریکیں زور کیسے پکڑتی ہیں

دنیا کا شاید ہی کوئی ملک

عمران خان او ر ڈاکٹر طاہر القادری

کالم نگار | رحمت خان ورد

راستہ بن چکا ہے : جاوید چوہدری

جولاہاکپڑے بُننے والوں ک

کچھ قادری صاحب کے بارے میں

پاکستان پیپلزپارٹی کے دو

لاہور کینال اور موت کا خونی کھیل

ایسا محسوس ہوتا ہے کہ لاہ

آ بیل مجھے مار

جاوید قاضی کسی زمانے میں

قرض پر مبنی معیشت

پاکستان جوکہ غربت کے منح

Meet Us

Name*
Email*
Message*

امریکا کا پاک بھارت کشیدگی پر تشویش کا اظہار

Last Updated:17-06-2015

واشنگٹن: امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے وزیراعظم نواز شریف کو ٹیلی فون کر کے پاک بھارت کشیدگی پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔ واشنگٹن میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے جان کیری کا کہنا تھا کہ انہوں نے پاکستان کے وزیر اعظم نواز شریف سے ٹیلی فونک رابطہ کیا جس میں کہا کہ پاکستان اور بھارت خطے کے اہم ممالک ہیں اور دونوں ممالک کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی نہ صرف امریکا بلکہ خطے کے لئے بھی تشویشناک ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ امریکا کی کوشش ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی کو قابو میں رکھا جائے اور فریقین معاملات کو افہام و تفہیم سے حل کر لیں۔ روسی صدر ولاد میر پیوٹن کی جانب سے بین البر اعظمی بلیسٹک میزائلوں کو جنگی بیڑے میں شامل کرنے کے بیان پر جان کیری کا کہنا تھا کہ روسی صدر کا بیان انتہائی تشویشناک ہے لیکن امریکا روس کے ساتھ تعلقات کو دوبارہ سرد جنگ کی جانب نہیں لے جانا چاہتا۔ دوسری جانب نیٹو حکام کا کہنا ہے کہ روس کی ایٹمی پیش قدمی غیرمنصفانہ اور خطے کے لئے خطرناک ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز روس کے صدر نے 40 بین البر اعظمی بلیسٹک میزائلوں کو جنگی بحری بیڑے میں شامل کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ میزائلوں کی تنصیب کے بعد کسی بھی مہم جوئی سے نمٹ لیں گے۔

Share or Like:

Fallow Us:

مزید خبریں