A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Only variable references should be returned by reference

Filename: core/Common.php

Line Number: 257

A PHP Error was encountered

Severity: Warning

Message: Cannot modify header information - headers already sent by (output started at /home/pakist14/public_html/system/core/Exceptions.php:185)

Filename: libraries/Session.php

Line Number: 672

Pakistan News

اخبارات

اہم خبریں


آج سے ہزار سال بعد دنیا کیسی ہوگی ؟

آج سے ہزار سال بعد ہم او

اسلامی معاشرے کے خدوخال

دین اسلام تعمیر سیر ت و ک

16 دسمبر

16 دسمبر میں مون ہوں‘ نہی

سوات کی بیٹی

چلو کہ دشتِ جہالت کو خیر

عمران خان کے لیے

خان صاحب آپ نے 25 اپریل 1996

یا اللہ ہمیں بچالے

ارادوں اور بعض اوقات پخت

تحریکیں زور کیسے پکڑتی ہیں

دنیا کا شاید ہی کوئی ملک

عمران خان او ر ڈاکٹر طاہر القادری

کالم نگار | رحمت خان ورد

راستہ بن چکا ہے : جاوید چوہدری

جولاہاکپڑے بُننے والوں ک

کچھ قادری صاحب کے بارے میں

پاکستان پیپلزپارٹی کے دو

لاہور کینال اور موت کا خونی کھیل

ایسا محسوس ہوتا ہے کہ لاہ

آ بیل مجھے مار

جاوید قاضی کسی زمانے میں

قرض پر مبنی معیشت

پاکستان جوکہ غربت کے منح

Meet Us

Name*
Email*
Message*

کراچی میں بس پر فائرنگ سے 44 افراد جاں بحق، 12 زخمی

Last Updated:13-05-2015

کراچی میں خواتین اور بچوں سمیت 60 سے زائد افراد بس کے ذریعے صفورا گوٹھ اسکیم 33 سے عائشہ منزل جارہے تھے کہ صفورا چورنگی کے قریب دہشت گردوں نے بس کو روک کر پہلے ڈرائیور کو نشانہ بنایا جس کے بعد مسافروں پر خود کار ہتھیاروں سے فائرنگ کردی جس کے نتیجے میں 44 افراد جاں بحق ہوگئے جن میں 27 مرد اور 17 خواتین شامل ہیں جب کہ 10 سے زائد افراد زخمی بھی ہوئے۔ جائے وقوعہ سے دہشت گردوں کے فرارکے بعد بس میں سوارسلطان علی نامی زخمی مسافر بس کو قریبی اسپتال لے آیا جہاں زخمیوں کو فوری طبی امداد فراہم کی گئی جب کہ بعض زخمیوں کو آغا خان اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ آئی جی سندھ غلام حیدرجمالی کے مطابق واقعے میں ملوث 6 دہشت گرد 3 موٹر سائیکلوں پر آئے اورانہوں نے نائن ایم ایم پستول کا استعمال کیا۔ جائے وقوعہ سے ملنے والے شواہد کی مدد سے دہشت گردوں کے خلاف تحقیقات بھی شروع کردی گئی ہیں اور انہیں جلد گرفتار کر کے کیفرکردارتک پہنچایا جائے گا۔ دہشت گردوں کے حملے میں زخمی ہونے والی خاتون نے پولیس کو بیان قلمبند کراتے ہوئے بتایا کہ بس کو روانگی سے چند منٹ بعد ہی روک لیا گیا جب کہ وہ بس کے عقبی دروازے سے داخل ہوئے، دہشت گردوں نے سب سے پہلے بس ڈرائیور کو یرغمال بنایا جس کے بعد انہوں نے تمام افراد کو سر نیچے کرنے کا حکم دیا اور ایک دہشت گرد نے بس میں سوار 2 بچوں کو الگ کرکے عقب میں موجود شخص نے فائرنگ کا حکم دیا جس کے بعد دہشت گردوں نے اندھا دھند فائرنگ کی۔ انہوں نے بتایا کہ ابتدائی طور پرمسافروں نے سمجھا کہ شاید لوٹ مارکے لئے ڈاکو بس میں چڑھے ہیں تاہم انہوں نے مسافروں کے سروں میں گولیاں ماریں۔ وزیراعظم نواز شریف اور وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے جاں بحق افراد کے لواحقین سے اظہار تعزیت کیا ہے جب کہ وزیراعلیٰ سندھ قائم علی شاہ نے علاقہ ایس ایچ او اور ڈی ایس پی کو معطل کرتے ہوئے آئی جی سندھ سے واقعے کی رپورٹ بھی طلب کرلی ہے۔ دوسری جانب سندھ حکومت نے سانحے پر ایک روزہ جب کہ شیعہ علما کونسل نے 3 روزہ سوگ کا اعلان کیا ہے،اس کے علاوہ ایم کیو ایم نے بھی کل تمام کاروباری سرگرمیاں معطل کرنے کی اپیل کی ہے۔ ادھراسماعیلی برادری کے روحانی پیشوا پرنس کریم آغا خان نے فرانس سے اپنے بیان میں سانحہ صفورا گوٹھ کی شدید مذمت کرتے ہوئے حملے میں جاں بحق افراد کے خاندانوں سے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ پرامن کمیونٹی کے خلاف دہشت گردی ناقابل فہم اور بے حسی کی انتہا ہے، میری دعائیں غمزدہ خاندانوں کے ساتھ ہیں۔

Share or Like:

Fallow Us:

مزید خبریں